تازہ سرگرمیاں
'بدلتا ہوا عالمی نظام: پاکستان کے لئے مضمرات اور مواقع' پی ڈی ایف چھاپیے ای میل
سیمینار

Evolving Wordl Order thumb1انسٹیٹیوٹ آف پالیسی اسٹڈیز میں ۱۳ فروری ۲۰۱۷ کو ایک سیمینار منعقد ہوا جس سے جان ہاپکنز یونیورسٹی کے پولی ٹیکٹ فیلو اور خلیجی مملک  کے امور کے ماہر عبداللہ خرم نےکلیدی اسپیکر کے طور پر اظہارِ خیال کیا۔ 'بدلتا ہوا عالمی نظام: پاکستان کے لئے مضمرات اور مواقع' مباحثے کا عنوان تھا جس کے دیگر شرکاء میں ڈی جی آئی پی ایس خالد رحمٰن، سینیر ریسرچ فیلو، سینٹر فار انٹرنیشنل سٹریٹیجک استڈیز، سید محمد علی، سابق سفیر ایاز وزیر، بین القوامی تجارت کے ماہر ظیرالدین ڈار اور آئی پی ایس کی ریسرچ ٹیم کے ارکان شامل تھے۔

مزید پڑھیے۔۔۔
 
سابق چیف اکنامسٹ فصیح الدین کی کتاب 'مشاہداتِ زندگی' کی تقریب رونمائی پی ڈی ایف چھاپیے ای میل
سیمینار

MushahidateZindagi thumb3انسٹی ٹیوٹ آف پالیسی اسٹڈیز (آئی پی ایس) سے وابستہ معروف ماہر اقتصادیات اور سابق چیف اکنامسٹ، پلاننگ کمیشن آف پاکستان، فصیح الدین کی کتاب "مشاہداتِ    زندگی' کی تقریب رونمائی 2 فروری ۲۰۱۷ کو انسٹی ٹیوٹ کے سیمنار ہال میں منعقد ہوئی۔ کتاب کوآئی پی ایس پریس (انسٹی ٹیوٹ کے اشاعتی بازو) نے شایع کیا ہے۔

مزید پڑھیے۔۔۔
 
توانائی کی بچت کا قانون: اطلاق پر عمل درآمد کا جائزہ پی ڈی ایف چھاپیے ای میل
سیمینار

Energy Conservation Law thumb 126جنوری 2017ء کو انسٹی ٹیوٹ آف پالیسی اسٹڈیز میں تونائی کے کارگراستعمال اور بچت کے ایکٹ 2016 پر منعقد ہونے والے سیمینار میں اس پر عمل درآمد کی حکمتِ عملی اور پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔ حال ہی میں قائم کیے گئے NEECA (National Energy Efficiency & Conservation Authority) کے مینیجنگ ڈائریکٹر حسن ناصر جامی کی نمائندگی کرنے والے انجینئر اسد محمود نے اس پالیسی مباحثے میں بتایا کہ طویل انتظار کے بعد منظور ہونے والے اس  قانون پر عمل درامد کے لیے ایک مربوط قومی پالیسی وضع کی جا رہی ہے جس کے ڈرافٹ کو اگلے دو ہفتوں کے اندر  تمام اسٹیک ہولڈروں کو ان کی آراء جاننے کے لیے بھیج دیا جائے گا۔

مزید پڑھیے۔۔۔
 
مربوط منصوبہ بندی اور بہتر طرز حکمرانی ہی توانائی کے مسئلے کا حل ہے پی ڈی ایف چھاپیے ای میل
سیمینار

pak energy sector thumbتوانائی کے ماہرین نے پالیسی سازی سے متعلق ایک گول میز کانفرنس میں حکومت پہ زور دیا ہے کہ وہ توانائی کے شعبے میں طویل مدتی مربوط منصوبہ بندی  کو فروغ دے۔ بالخصوص چین پاکستان اقتصادی راہداری سے متعلقہ توانائی کے منصوبوں میں بہتر حکمت عملی ، انتظام و انصرام اور عملی اقدامات پر گہری نظر رکھنے کی ضرورت ہے۔

مزید پڑھیے۔۔۔
 
مزید مضامین...
«شروعپیچھے12345678910آگےآخر»