فضائی آلودگی پر قابو اور ماحولیاتی قانون کا اطلاق چھاپیے

 بریف ”فضائی آلودگی پر قابو اور ماحولیاتی قانون کا اطلاق“ اس بات کی طرف توجہ دلاتا ہے کہ اگرچہ صاف ہوا کا حق تسلیم کر لیا گیا ہے اور اسے پاکستان میں خاطرخواہ قانونی تحفظ بھی دے دیا گیا ہے تاہم اس پر کارروائی میں جو نمایاں خلا موجود ہے اس کے باعث پالیسی پر عمل درآمد کی عملی شکل محدود ہے۔ قانون میں پیچیدگی، پیچیدہ انضباطی نظام، اعدادوشمار کی ناموزوں اور غیرقانونی نگرانی، نگرانی اور انضباطی تکمیل میں کمزوری، ETS کے لیے محدود رسائی اور حفاظتی ایجنسیوں کو درپیش بجٹ کی رکاوٹیں وہ عوامل ہیں جنہوں نے مجموعی طور پر مسئلے کے حل کے لیے کی جانے والی کوششوں کا نتیجہ کم ترین سطح پر پہنچا رکھا ہے۔ نوعیت کے لحاظ سے یہ تمام مسائل ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں اور ایک ہی وقت میں مسائل کو سنگین بنا رہے ہیں۔